Skip to content Skip to sidebar Skip to footer

شاہی قلعہ – لاہور پاکستان

لاہور قلعہ، عام طور پر شاہی قلعہ کے نام سے مشہور ہے۔

لاہور قلعے کی اصل تاریخ قدیم مغل سلطنت سے منسلک ہے، مگر اس قلعہ کی اصل بنیاد عظیم مغل بادشاہ جلال الدین اکبر کے دور میں سن 1556 سے 1605 کے درمیان رکھی گئی۔

بعد ازں مختلف مغل اور سکھ اباطرہ نے اس کی تزئین وآرائش کی اور انگریز حکمرانوں نے بھی اس میں مختلف تبدیلیاں کیں۔ اس قلعے کے دو دروازے ہیں۔ ایک دروازہ مغیری دروازے کے نام سے مشہور ہے، جسے اورنگزیب نے تعمیر کیا تھا۔ یہ دروازہ باشاہی مسجد کی طرف کھلتا ہے۔ جبکہ دوسرا دروازہ جو در حقیقت زیادہ قدیم ہے، “ماستی” کے نام سے مشہور ہے۔ یہ شہر کے جانب کھلتا تھا۔ جسے جلال الدین اکبر نے تعمیر کیا تھا۔ قلعہ میں مغل طرز تعمیر کی جھلک نظر آتی ہے۔

قلعے میں موجود تاریخی جگہوں میں سے ایک شیش محل بھی ہے۔

سن 1981ء میں یہ یونیسکو نے لاہور قلعے کو عالمی ثقافتی ورثہ کی شامل کیا۔ مگر 2000ء میں اس قلعے کو ایسی عالمی ثقافتی مقامات میں شمار کیا جانے لگا جنہیں شدید خطرات لاحق ہیں، اور یہ قلعہ اب بھی ان انتہائی نگہداشت والے مقامات میں شمار کیا جاتا ہے۔

ڈاکٹر عبدالرحمن حماد الازھری

Spread the love
Show CommentsClose Comments

Leave a comment