Skip to content Skip to sidebar Skip to footer

علامہ شیخ محمد الصادق عرجون

بقلم: د۔ محمد عبدالعزیز خضر

ازہر شریف سے پیدا ہونے والے نامور علماء میں سے علامہ شیخ محمد الصادق عرجون بھی ہیں۔ جن کی ولادت شہر ادفو مصور میں سن 1321ھ/  1903ء میں ہوئی  جبکہ آپ کا وصال سن 1400ھ/1981ء میں ہوا۔ اس عظیم عالِم نے ازہر شریف سے سن 1929ء میں اپنی تعلیم مکمل کی۔ اور آپ نے عمومی تخصص کی سند 1935ء میں لی۔ جبکہ فورا بعد جامعہ ازہر کے معہد میں مدرس کی حیثیت سے عملی زندگی شروع کی یہاں تک کہ آپ دسوق دینی معہد کے شیخ مقرر ہوئے۔ بعد ازاں آپ کو شیخ معہد اسیوط الدینی کا شیخ مقرر کیا گیا۔ بعد ازاں معہدِ اسکندریہ کےشیخ اور وہاں کے تمام علماء کے عمید کی حیثیت سے نگران مقرر ہوئے۔ بعد ازاں شعبہ عربی زبان ازہر میں آئے پھر 1964ء میں شعبہ اصول الدین میں عمید الکلیہ کی ذمہ داری سرانجام دی۔ آپ نے کویت ، سوڈان، جمہوریہ لیبیہ، مدینہ منور، جامعہ ام القری مکہ مکرمہ میں بھی ذمہ داریاں سر انجام دیں۔

علامہ محمد الصادق عرجون نے کئی اہم موضوعات پر کتابیں تحریر کیں  جن کی وجہ سے آپ کا شمار کبار مؤرخین میں ہوتا ہے۔ آپ کی تصنیفات درج ذیل ہیں:

1۔ “محمد رسول اللہﷺ منہج ورسالہ” اس کتاب ِ نافع کی تحریر میں آپ نے   دس سال کا عرصہ تحقیق میں گزارا اور بعد ازاں چار جلدوں پر مشتمل یہ کتاب اشاعت پذیر ہوئی۔جس میں آپ نے بڑی تحقیق اور دقیق علمی موضاعات پر بحث ومباحثہ کیا ہے اور علمی تنقید کرتے ہوئے مختلف روایات کی صورت میں کہیں مطابقت کا راستہ ، تو کہیں دقیق علمی مناقشہ کے بعد قبول ورد کی طرف گئے ہیں جو یقینا ایک اچھا علمی انداز ہونے کے ساتھ ساتھ قارئین کے لئے متاثر کن بھی ہے۔

2۔ آپ کی تالیف کا دوسرا میدان مذاہب وشخصیات سے متعلق ہے ۔ ان کتب میں آپ کی کتاب “عثمان بن عفانؓ”  خلیفہ راشد  جن پر افتراء لگائی گئیں۔ دوسری کتاب “خالد بن الولیدؓ” اور تیسری کتاب “علی ؓبن ابی طالب” اور “ابو حام الغزالی المفکر الثائر” اس کتاب میں آپ تصوف کے مسائل پر بحث کرتے ہیں اور ساتھ ہیں گہرائی کے ساتھ آزادی فکر ونظر کو بھی زیر بحث لائے ہیں ۔ آپ نے اس کتاب میں امام غزالی کی کتاب “احیاء علوم الدین” کے مصادر کو بھی زیر بحث لایا ہے۔

3۔ ایسی تصانیف جس پر بحث کرنے کی یہاں گنجائش نہیں ۔ ان میں سے اہم ترین کتاب “سنن اللہ فی المجتمع” جو بحیثیت خود موسوعہ کی حیثیت رکھتی ہے۔ ان کتب میں آپ نے اسلام کے اندازِ عفو ودرگزر پر تحقیق کی ہے اور طویل تاریخ اسلام کے مصادر ومراجع کو زیر بحث لایا ہے اور مسلمانوں کے عرصہ تاریخ میں تطبیقِ دین پر بھی لکھا ہے۔ مذکورہ کتاب میں آپ نے معاشرہ سے متعلق اللہ کی سنتوں کا ذکر کیا ہے ۔ اللہ پاک علامہ محمد الصادق عرجون پر رحم فرمائے اور انہیں مسلمانوں خصوصا ازہر کی طرف سے جزائے خیر سے نوازے۔

Spread the love
Show CommentsClose Comments

Leave a comment